مردوں کی فضیلت

ج: آپ کا سوال غلط فہمی پر مبنی ہے ۔ اسلام میں عورتوں اور مردوں کے درمیان کوئی مطلق فضیلت کا تصور نہیں ۔نہ مرد کو عورت پر مطلق فضیلت دی گئی ہے نہ عورت کو مرد پر بلکہ اللہ تعالی نے اپنا یہ قاعدہ بیان کیا ہے کہ ہم نے بعض کو بعض پر فضیلت دی فضلنا بعضھم علی بعض ۔ اللہ تعالی نے کچھ معاملات میں عورتوں کو اور کچھ میں مردوں کو غیر معمولی صلاحیتیں دی ہیں۔ اللہ نے یہ فرمایا ہے کہ گھر کا نظم و نسق چلانے کے لیے مرد کا ایک درجہ برتر ہو گا جیسے باپ کا بیٹے پرہوتا ہے تاکہ گھر کا نظم و نسق چلتا رہے ۔ گویا فضیلت ہے بیوی پر ایک درجہ ،شوہر کو، نہ کہ سارے مردوں کو ساری عورتوں پر۔جیسے اولاد پر ایک درجہ باپ کو اور ماں کو فضیلت ہوتی ہے۔یہ گھر کا نظم و نسق چلانے کے لیے ایک انتظامی فضیلت ہے، یہ کوئی نسلی فضیلت نہیں ہے ۔

(جاوید احمد غامدی)