Naeem

نعیم صدیقی


مضامین

 میں ایک نعت کہوں سوچتا ہوں کیسے کہوں میں ایک نعت کہوں سوچتا ہوں کیسے کہوں ہے مضطرب سی تمنا کہ ایک نعت کہوں میں اپنے زخموں کے گلشن سے تازہ پھول چنوں  پھر ان پہ شبنمِ اشکِ سحر گہی چھڑکوں  پھر ان سے شعرکی لڑیاں پرو کے نعت کہوں  میں...


اے میرے نبی صدق و صفا! اے میرے نبی صدق و صفا!  جب دل پہ شب غم چھاتی ہے اور دل کی شب غم میں کوئی جب برق بلا لہراتی ہے  اور برق بلا جب بن کے گھٹا باران شرر برساتی ہے ایسے میں تڑپ اٹھتا ہے یہ دل، ایسے میں تیری یاد آتی ہے! اے میرے نبی صدق و صفا...


  تاریخ نے پوچھا اے لوگو یہ دنیا کس کی دنیا ہے شاہی نے کہا یہ میری ہے اور دنیا نے یہ مان لیا   پھر تخت بچھے ایوان سجے گھڑیال بجے دربار لگے تلوار چلی اور خون بہے انسان لڑے انسان مرے   دنیا نے آخر شاہی کو پہچان لیا پہچان لیا ...


  ہے چہرہ چاند ، ساری شخصیت ہے چاندنی ، آہا گواہی دی نگاہوں نے ، تمھی یٰسیں ، تمھی طاہا   بہ صد پیرایہ ہر سُو انعکاسِ حسنِ گل دیکھا تکلّم ہا ، تبسّم ہا ، تجلّی ہا ، تماشا ہا!   یہ صبر و حِلم و وَقر و نظم کے داعی کا مکتب ہے ...